عدالت میں جمع کروائے گئے عبوری چالان کے مطابق ملزم نے والد کو نور مقدم کے ق، ت، ل کی اطلاع دی تو انہوں نےکہا گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے،

والد نے کہا ہمارے بندے آ رہے ہیں جو ل، اش ٹھکانے لگاکر اسے وہاں سے نکال لیں گے۔ عبوری چالان میں بتایا گیا ہے کہ اگر

ذاکر جعفر بروقت پولیس کو اطلاع دیتا تو نور مقدم کا ق، ت، ل بچ سکتا تھا، ملزم ظاہر جعفر کے والد نے اس وقوعہ میں اپنے بیٹےکی مدد کی ہے۔ ملزم کے بیان کے مطابق تھراپی ورکس کے امجد محمود سے جھگڑا غلط فہمی پر ہوا، تھراپی ورکس کے ملازمین نے ملزم کا فعل چھپانے اور ش، ہ، ا، دت ضائع کرنےکی کوشش کی،

تھراپی ورکس کے زخمی ملازم امجد نے وقوعہ کا اندراج بھی نہیں کروایا، تھراپی ورکس کے زخمی ملازم امجد نے میڈیکل سلپ میں روڈ ایکسیڈنٹ درج کروایا۔ عبوری چالان میں کہا گیا ہے کہ ڈی وی آر میں محفوظ شدہ تصاویر اور فنگر پرنٹس بھی ملزم کے ہی ہیں، 12 اگست کی ڈی این اے رپورٹ کے مطابق ملزم کااس کے ساتھ ر، ی،

پ ثابت ہے، نور مقدم واش روم سے چھ، ل، ان، گ لگا کر گیٹ پر آئی تو چوکیدار نے اسےسہولت نہیں دی، مالی جان محمد نے بھی نور مقدم کو گیٹ نہیں کھولنے دیا، مالی جان محمد نور مقدم کو گیٹ کھولنے دیتا تو وہ باہر جا سکتی تھی۔

شئیر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں